وہی ہوا نا‘ بچھڑنے پہ بات آ پہنچی

تجھے کہا تھا پُرانے حساب رہنے دے

Advertisements